پی ٹی آئی قیادت کیخلاف بیان بازی، عامر لیاقت اور آفتاب جہانگیر سے وضاحت طلب

کراچی(ویب ڈیسک) پارٹی قیادت اور پالیسیوں کے خلاف بیان بازی پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کراچی ڈویژن نے اپنے دو اراکین قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین اور آفتاب جہانگیر سے وضاحت طلب کرلی۔
دونوں اراکین اسمبلی کو ڈسپلینری کمیٹی کے روبروپیش ہوکر تحریری جواب جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔خیال رہے کہ گزشتہ چند روز کے دوران عامر لیاقت حسین اور آفتاب جہانگیر کی جانب سے پارٹی مخالف بیانات سامنے آئے تھے۔آفتاب جہانگیر نے آڈیو پیغام کے ذریعے پی ٹی آئی سے احساس محرومی کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ ہم بھی کراچی سے منتخب ہوئے ہیں لیکن افسوس ہےکہ چاہے اسلام آباد ہو یا کراچی ہمیں نظر انداز کیا جارہا ہے۔
فحش فلموں میں اداکاری کی خواہشمند نوجوان لڑکی نے پہلے سین کی شوٹنگ کے دوران ہی پیشہ چھوڑدیا، اور اس کی وجہ ایسی شرمناک ترین بتائی کہ جان کر مردوں کی بھی آنکھیں نم ہوجائیں
ان کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم سے ملاقات ہو یا ادارہ نورحق کا دورہ ہمیں نظر انداز کیا جارہا ہے ہم سے پوچھا نہیں جارہا ہے۔آفتاب جہانگیر نے پی ٹی آئی کے صدارتی امیدوار ڈاکٹرعارف علوی سے مطالبہ کیا کہ ‘آپ کراچی کے بڑے ہیں یہ معاملات دیکھیں’۔دو روز قبل عامر لیاقت نے بھی گورنر سندھ عمران اسماعیل کی حلف برداری کی تقریب کے بعد عشائیے میں مدعو نہ کرنے پر شدید غصے کا اظہار کیا تھا اور انہوں نے سندھ کی پارلیمانی پارٹی کا واٹس ایپ گروپ بھی چھوڑ دیا تھا۔
پروگرام ’آپس کی بات‘میں گفتگو کرتے ہوئےپی ٹی آئی کے ایم این اے نجیب ہارون نے بتایا کہ عامر لیاقت حسین سے رابطہ ہو گیا ہے، صدارتی انتخاب میں عارف علوی کو ہی ووٹ دیں گے۔انہوں نے کہا کہ گورنر ہاؤس کراچی میں ملاقات کی دعوت کی اطلاع انہیں فون اورواٹس ایپ پر دی گئی۔

اس معاملے پر پی ٹی آئی کراچی کے صدر فردوس شمیم نقوی کا کہنا تھا کہ اگر گروپ پر عامر لیاقت نے میسیجز نہیں دیکھے یا غلط نمبر دیا تواس میں پارٹی کا کیا قصور؟ اور جب عشائیہ ہوا ہی نہیں تو کسی کو بلانا نہ بلانا کیسا؟

اپنا تبصرہ بھیجیں